سویئڈن میں قائم سٹاک ہوم سینٹر فار فریڈم نے 27 اپریل کو اپنی حالیہ رپورٹ  میں کہا ہے کہ ترک حکومت 15جولائی کی بغاوت کی کوشش کے تناظر میں خوف اور دیشت پھیلانے کی مہم کے سلسلے میں باقاعدہ منصوبہ بندی کے ساتھ خواتین کو قید کر رہی ہے۔

اس رپورٹ میں حال ہی میں حراست میں لی جانے والی کئی خواتین کی دستاویزات پیش کی گئی ہیں جن کا ماضی میں کوئی مجرمانہ ریکارڈ نہیں۔

رپورٹ کے مطابق اس مہم کا مقصد ترک معاشرے میں دہشت کی فضا پیدا کرنا اور انہیں آزادی تحریر و تقریر اور اجتماع کے حق کو استعمال کرنے سے روکناہو سکتا ہے۔ تمام مکاتب ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی خواتین اس مہم کا نشانہ بنی ہیں۔

کئی کیسز میں دیکھا گیا کے خاتون کو ہسپتال میں بچے کی پیدایش کے فوراََ بعد گرفتار کر لیا گیا۔ بہت سی خواتین کو اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ جیل میں قید اپنے شوہر سے ملاقات کے لیے آیئں۔  ایک اور کیس میں پولیس اسٹیشن میں تشدد کے باعث ایک خاتون اپنے ہوش و حواس کھو بیٹھی لیکن اسے پھر بھی جیل میں ڈال دیا گیا۔ بیت سے کیسز میں حکومت نے ان تاجروں کی بیویوں کو زیر حراست لے لیا جو ترکی کے مطلق العنان صدر کی مخالفت کرتے ہیں ااس کے ساتھ ساتھ ان کے تمام کاروبار اور اثاثے بھی ضبط کر لیےگئے۔