حجر چقماق ان سینکڑوں ہزاروں لوگوں میں سے ایک ہے جو حکومت کی جانب سے پندرہ جولائی کے تناظر میں گولن تحریک کے خلاف کیے جانے والے کریک ڈاون کی وجہ سے شدید مشکلات کا شکار ہیں۔

وہ تین بچوں کی ماں ہیں جن میں سے دو معذور ہیں۔ وہ ترک جج سیف اللہ چقماق کی اہلیہ ہیں جو270 دنوں سے کاندرا جیل میں قید ہیں۔

ان کے دو معذور بچے ایک موروثی بیماری کا شکار ہیں اور اکثر چلنے پھرنے سے قاصر حالت میں ہوتے ہیں تاہم وہ پبلک ہیلتھ انشورنس کے فوائد سے محروم ہیں کیونکہ ان کے والد کے بنک اکونٹ اور اثاثے ضبط کر لیے گئے ہیں اور ہیلتھ کوریج کینسل کر دی گئی ہے۔

Related News