برسہ کی ایک عدالت نے سات ماہ قبل ستمبر میں جیل  کے غسل خانےمیں مردہ پائے جانے والے پراسیکیوٹر سیف الدین یگت کی حراست جاری رکھنے کا فیصلہ سنا دیا۔

خبردار میڈیا آوٹ لیٹ کے مطابق عدالت یگت کی رہائی کی درخواست کی سماعت کر رہی تھی جبکہ اس کی موت کو سات ماہ کا عرصہ گزر چکا ہے۔

47 سالہ پراسیکیوٹر کو اگست 2016 کو گولن تحریک کے خلاف آپریشن کے دوران گرفتار کیا گیا تھا جبکہ وہ ستمر میں جیل کے غسل خانے میں رسی سے لٹکا پایا گیا۔

یگت ان پراسیکیوٹرز میں شامل تھا جو ہاوسنگ ڈویلپنٹ ایڈمنسٹریشن آف ترکی (TOKI) میں بے قاعدگیوں کے الزامات کی 2013 کے اواخر میں تحقیقات کر رہے تھے ۔ یہ وہ تاریخی سال تھا جب کابینہ کے چار ممبران اور اس وقت کے وزیر اعظم رضب طیب اردگان کے بیٹے کے خلاف بد عنوانی کے الزامات سامنے آئے تھے۔

Related News